Friday, November 14, 2014

تڑپ رھی ھَے رعایا تو بھاڑ میں جائے جہاں پناہ تو دربار میں سکون سے ھیں یہ رفتہ رفتہ ترے گھر کو فتح کر لیں گی دراڑیں جو ابھی دیوار میں سکون سے ھیں محبّتوں سے انھیں کیا غرَض ؟ کہ یہ بے شکل فضائے دِرھم و دینار میں سکون سے ھیں ۔۔ !!


No comments: